آن لائن تعلیم کے مواقع اور چیلنجز

Spread the love

تحریر:اسرار بلوچ


انسان شروع ہی سے بے شمار چیلنجوں کا سامنا کر رہا ہے انہی چیلنجوں کی وجہ سے بے شمار معاشرتی,معاشی, سماجی, اور حتیٰ کہ جانی نقصان بھی اٹھا نا پڑا ہے. انسان علم,ہنر اور عقل کی رکھنے کی وجہ سے کسی حد تک کچھ نہ کچھ کامیابی بھی حاصل کی ہیں. ان سب سے بڑھ کر اسے سیکھنے کے لئے یہ ملا ہےکہ موجودہ مشکلات کو سامنے رکھ کر مستقبل میں کسی دوسرے مشکلات کے ساتھ کیسے نمٹا جائے.
دور حاضر میں بنی نوع انسان کو جان لیوا واہرس کویڈ 19 کا سامنا ہیں. یہ وائرس اپنے ‘شدید اثرات کی وجہ سے پوری دنیا کو اپنے لپٹ میں لیا ہیں. اس کے جان لیوا اثرات کی وجہ سے زندگی کے ہر شعبہ بوری طرح سے متاثر ہو رہے ہیں. حتیٰ کہ نظام تعلیم بھی اس کے وجہ سے بوری طرح متاثر ہیں. ترقی یافتہ قومیں اپنے تعلیمی معیار کو برقرار رکھنے کے آن لائن نظام متعارف کرایا ہیں. اس کے برعکس ترقی پذیر قومیں کے تعلیمی معیار  پہلے سے بھی زیادہ خراب ہو رہاہے. اس میں کوئی شک نہیں کہ آن لائن دور جدید کے ضرورت میں سے ایک بنیادی جز ہیں.لیکن اس نظام کو اپنانے سے اس کے ضروری مسائل پر توجہ دینے بھی لازمی ہیں.
در حقیقت, آن لائن تعلیمی نظام کے تصور بیسویں صدی کے آخر میں ہواتھا. کہا جاتا ہے کے سب سے پہلے یونیورسٹی آف ٹورنٹو نے یہ تصور 1984 میں پیش کیا. جس کے بعد یونیورسٹی آف پونقس سب سے پہلے تعلیمی ادارہ تھا,جس نے باقاعدہ گی سے آن لائن نظام تشکیل دی یہ سب سے پہلے آن لائن تعلیمی نظام کا ایک انقلابی آ غاز تھا.جو دیکھے ہی دیکھتے اکثر ترقی یافتہ ممالک کے خواب بن گئے. آج کے اس ڈیجیٹل کے دور میں دنیا کے سب سے بہترین یونیورسٹیوں میں یہی سسٹم راج کر رہاہے. ایک رپورٹ کے مطابق, اندھیرا گاندھی نیشنل یونیورسٹی سب سے زیادہ آن لائن تعلیم فراہم کررہی ہیں.مزید4 جی اور 5 جی انٹرنیٹ اسپیڈ کی وجہ سے آن لائن تعلیمی نظام کے اہمیت بڑھ رہا ہیں.
اگر صیع معنوں میں دیکھا جائے تو اس نظام کے کہی فائدہ ہیں,جو کہ دور جدید کے تعلیم کے لئے مفید ہو سکتے ہیں. اس کے سب سے پہلے اور ایم فائدہ یہ ہے, کہ اس میں دوسرے اخراجات میں کمی آسکتی ہیں. کیونکہ کہ آف لائن کلاسوں میں بنیادی ڈھانچہ و دیگر سہولتیں نہ ہونے کی وجہ سے تعلیم پر کافی بورا اثر پڑھتا ہیں. مثال کے طور پر, مختلف ایپلی کیشنز ,زوم. ٹیلی گرام چینل,گول گل,کے ذریعے مختلف مضامین کے لیکچر ز فراہم کیا جا سکتا ہیں.
مزید, اس نظام کے متعارف کرنے اور بے شمار فائدہ بھی ہیں. اس میں آس طالب علموں کو رعایت مل سکتی ہیں, جو بہت سے مشکلات کے وجہ سے تعلیمی ارادے تک رسائی حاصل نہیں کرتے ہیں. آن لائن ان سب رکاوٹیں کو کسی حد تک کم کر سکتے ہیں. اس کے علاوہ اس سے ہنر مند اور قابل اور محنتی طالب علموں کو ملازمت کے مواقع حاصل ہوسکتے ہیں. کیونکہ ذہن طلباء خود ہی مختلف سو شلابی میڈیا ویب کے ذریعے اپنا چینل بنا کر بھی لیکچر دے سکتے  ہیں.
اس کے ساتھ آن لائن سسٹم میں مختلف سبجیکٹ اسپلیسٹس کے لیکچر کو رکارڈ کیا جا سکتا ہیں جنہیں کہی دفعہ سننے میں مدرگار ثابت ہوسکتی ہیں.  
اس میں کوئی شک نہیں کہ آن لائن تعلیمی نظام کے کہی فائدہ ہیں لیکن اس کے ساتھ منسلک دوسرے سہولیات کو پورا نہ کرنے سے یہ نظام بجائے رحمت کے زحمت بن جاتا ہیں اسے نافذ کرنے پہلے انٹرنیٹ سسٹم کا بحال ہونا بھی سب سے ایم سمجھا جاتا ہے. انٹرنیٹ آن لائن تعلیمی نظام کے ایک بنیادی جز ہیں لیکن. 

پہلے سے ہی موبائل سگنل تک موجود نہ ہونے سے آن لائن تعلیمی نظام صرف براے نام رہا جاتا ہیں
مزید یہ کہ متاوزن زبان متعارف کرنا بھی آن لائن تعلیمی نظام کے ایک بنیادی جز ہیں.اکثر تعلیمی اداروں میں انگریزی کو ترجیع دی جاتی ہیں. یہ آن طالب علموں کے لیے درد سر بن جاتا جو انتہائی پسماندہ علاقوں سے تعلق رکھتے ہیں.ساتھ ہی ساتھ, سست اور تابع طالب علموں کے لیے بھی یہ نظام کسی زحمت سے کم نہیں ہیں. جو بالواسطہ یا بلا واسطہ گروپ لیرنگ سسٹم کو ترجیع دی جاتی ہیں. کچھ اور رکاوٹیں مثال کے طور پر وباہ کے دوران تعلیمی اداروں کے ٹیوشن فیس میں بے جا اضافہ,سلیبس کو مختصر اور ذاتی سرگرمیاں کو مکمل طور پر نظر انداز کرنا,آن لائن تعلیمی ماحول کے فضا قائم کرنا اور علم و آگاہی نہ ہو نے کی وجہ سے آن لائن تعلیمی نظام کے متعارف کرنا ایک ناکام عمل ہو کہ رہا جاتی ہیں.
مختصر, آن لائن تعلیمی نظام دور حاضر میں تعلیمی میدان میں ایک مثالی نمونہ ہے. اس کے نافذ کرنے سے تعلیم حاصل کرنا مزید آسان اور مفید ہوسکتے ہیں.یہ وباء کے لہروں کی خطرناک اثرات سے بھی پورہ تعلیمی نظام کو مکمل محفوظ اور جاری رکھنے سکتے ہیں. اکثرترقی یافتہ ممالک اسی نظام کو کامیابی کے ساتھ نافذ  کر چکے ہیں.اس کے بر عکس ترقی پذیر ممالک میں اس کمی شدید محسوس کی جاتی ہیں.کیونکہ وہاں پہلے سے ہی تعلیمی نظام کے معیار کے مطابق نہیں ہیں.

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

error: Content is protected !!