سال نو کا انھوکا پروگرام

Spread the love

تحریر:اسحاق حیدری

سال 2021 کا پہلا دن جہاں کوئٹہ شہر میں کراچی، لاہور اور دیگر شہروں کےلوگ کی بڑی تعداد کوئٹہ کے یخ بستہ ہواؤں کی سیر کرنے کوئٹہ آئے ہیں وہی ایک بڑی تعداد کوئٹہ سے کراچی سمیت گرم علاقوں کی سیر کو نکل پڑے ہیں ۔

منچلے اور نوجوان کی ایک بڑی تعداد یا تو سڑکوں پر ون ویلنگ کرتی نظر آئی یا پھر بسیار خوری کے لئے ریستورانوں کا رخ کرتے نظر آئے ۔ ایسے میں سال نو کا سب سے انوکھا اور بہترین پروگرام کوئٹہ کے چند نوجوانوں کا رہا ۔ کتاب کلچر کو فروغ دینے اور لوگوں کے ذہنوں میں ایک مثبت پیغام دینے کے لئے اپنی گزشتہ روایات برقرار رکھتے ہوئے YCSF کے چیئرمین لالا رحمت بلوچ ؛ پڑاؤ کچاری کے چیئرمین سعید نور ؛ ان کے ٹیم ممبران نے منیر احمد خان چوک سریاب میں تاریخی کتاب سٹال لگاکر سال کا آغاز کتاب کلچر سے کیا ۔ جوکہ صبح سے شام تک جاری رہی ۔ شہریوں ؛ طلباء سمیت مختلف طبقات فکر نے سٹال کا دورہ کیا اور نیک خواہشات کا اظہار کیا ۔ سٹال میں ہر قسم کی کتابیں رکھی گئی تھی ۔ منتظمین کتابوں کی خریداری پر 50 فیصد کا خصوصی ڈسکاؤنٹ بھی دے رہے تھے ۔ سٹال کے شرکاء بالخصوص طالب علموں سے گفتگو کرتے ہوئے لالا رحمت بلوچ ؛ سعید نور اور دیگر نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ اس مشن کو جاری و ساری رکھا جائیگا تاکہ نوجوان نسل منشیات ؛ ون ویلنگ سمیت دیگر۔ منفی سرگرمیوں کے بجائے اس کلچر کو اپنائیں ۔ سٹال میں بی این پی رہنماؤں ٹکری صدام لانگو ؛ مبارک علی ہزارہ ؛ قاسم شاہ ؛ اسحٰق حیدری؛بسمل بلوچ اور عوام الناس کی بڑی تعداد نے شرکت کرکے YCSF اور پڑاؤ ادبی کچاری کے دوستوں کو اس حوالے سے آئندہ ہونے والے تمام پروگراموں میں ہرممکن تعاون کی یقین دہانی کرائی ۔ اور امید ظاہر کی کہ یہ کارواں زوال کے بجائے عروج کی جانب سفر کرے گی ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

error: Content is protected !!