لائقِ تعریف کون ؟

Spread the love

تحریر: بختیار رحیم بلوچ


معاشرے میں کچھ لوگ اپنے تعریف سنے سے خوش ہوتے ۔ کچھ لوگ کچھ کرنے کے بِنا کچھ کئے بغیر آنکھیں اور کانیں لگا کر تعریف کی راہ دیکھتے رہتے ہیں ۔کہاں سے کوئی تعریف کرتا ہے ۔
تعریف اور خوشامد کو ماہر نفسیات الگ الگ بتاتےہیں اور تعریف کے لائق وہ شخص ہوتا ہے جسکے کردار اچھے ہو۔
مثال کے طور پر بعض لوگ خوبصورتی میں اپنے مثال خود ہوتے ہیں ۔اسکے زہن میں ہوتا ہے کہ لوگ بس میری خوبصورتی سے ضرور متاثر ہیں۔ میں ہرحال قابل تعریف ہوں چایے اس خوبصورت شخص کے کچھ بھی کردار نہ ہو ۔کیا لوگ اسکی تعریف کرتے ہیں؟ یا اسکے باتوں کے سننے اسکے دیکھنے کے شیدائی ہوتے ہیں ؟
کلاس میں ایک خوبصورت طالب علم ہوم ورک کے بغیر سکول جاتا ہے۔اور ایک بدصورت کلاس فیلو ہوم ورک تیار کرکے سکول جاتا ہے استاد کے چیک کرنے کے بعد خوبصورت طالب علم استاد کے زبان سے کلاس میں ذلیل ہو جاتا ہے۔
کیا اس کی خوبصورتی رہی؟
اکثر داناؤں کی قول اور فعل سے یہی سنے اور سمجھنے کو ملتی ہے ۔خوبصورت وہ ہے جسکی کردار اچھے ہوں۔
بات کردار پر آئی ۔کردار کچھ کرنے کے نام ہوتا ہے ۔ میرے کردار کیا ہے؟ میرا کردار اپنے قوم کے لئے اچھے ہیں یا نہیں۔؟ ضروری نہیں میں جب تک زندہ ہوں لوگ میرا تعریف کرتے رہینگے ۔یاکہ میں کسی کے سامنے موجود ہوں تو وہ مجھے دیکھ کر میرا تعریف کرتا ھے ۔
یا جس نے مجھے دیکھا ہی نہیں وہ مجھے جانتا نہیں ہے وہ میرا تعریف کہاں سے کرتا ہے۔
مثال کے طور پر ایک کسان نے اپنے کھیتوں میں پانچ سو انار اگائے ہیں۔وہ اب دنیا میں نہیں ہے جب کوئی ان کے اگائے باغیچہ کے قریب سے گزرتا ہے ۔تو اس باغیچہ میں ہر انار کے پھولوں پر اس محروم کا تصویر عیان ہوتا ہے ۔کیونکہ اسکی ایک کردار تھا ۔وہ آج خود تو نہیں لیکن اسکا کردار اسکی تصویر اسکے کئے کام کو لوگوں کو دیکھائی دیتے ہیں۔
لوگ اسے دیکھ کر یا سلام کہہ کر واہ کریں ۔بلکہ اسکی کردار اسکے ہر اچھی کام پر اسکی تصویر ظاہر کر دیتا ہے۔
مثلا ایک آدمی نے اپنے قوم کے پینے کے پانی کے لئے ایک کنواں یاکہ اسکول تعمیر کروایا یاکہ کچھ اور نیک کام کئے اسکے مرنے کے بعد اسکا چہرہ اسی کنواں کے ہر پانی کے قطرہ پر اسکول کی دیوار پر باقی تمام کرداروں پر عیاں ہو جاتی ہے ۔
اچھے کردار ادا کرنے والے بھلے تعریف کا محتاج نہیں ہو پھر بھی لوگ اسکے تعریف کرتے ہیں۔
انسان کو بس اپنے کام جاری رکھنا ہو ۔وہ ملک اور قوم کے لئے فائدہ مند ہو معاشرہ کے لئے مثبت ہو ۔اسے یہ ضرورت نہیں کہ وہ دیکھ لیں کون اسکا تعریف کر رہا ہے ۔اسکی کام کردار لوگوں کو اسکی تعریف کرنے کے مجبور کر دیتے ہیں۔
ایک انجینئر ایک انجن بناتا ہے اسکا انجن قابل تعریف ہوتا ہے ۔
لوگ اسکے انجن زیادہ خریدتے ہیں۔
ایک کمپنی برائے نام کی چیزیں بناتا ہو ۔کاٹن کے اوپر کافی تعریفیں لکھی ہوتی ہے شاید لوگ ایک دفعہ دھوکہ کھائیں ۔اگلی مرتبہ غلطی سے نہیں لیتے ہیں۔
اچھے کردار خود بہ خود انسان کی شخصیت پر اچھے اثرات ڈالتے ہیں ۔
لوگ اس سے ملنے ہاتھ ملانے بات کرنے سے فحر محسوس کرتے ہیں ۔
انسان کو بس اچھے کام کرنا ہے اسکے اچھے کام اور کردار اسکی تعریف کرنے کے لئے لوگوں کو مجبور کرتے ہیں۔
بہت سے لوگ اچھے کام اور کردار نہ یونے کے باوجود جب کسی سے ملتا ہے تو اپنے تعریف کرنا شروع کرتا ہے ۔ایسے شخص خوشامد سنے کے شوقیں ہوتا ہے ۔
ماہر نفسیات کے مطابق ایسے شخص کھوکھلے زہنیت ہوتا ہے۔اس میں مستقبل مزاجی ،اپنے نیک اور بد کا پہچاں ،اپنے ملک و قوم کے لئے مثبت سوچ نہیں ہوتا ہے۔لوگ اسکے سامنے اسکی تعریف اسکے خوش کرنے کے لئے کرتے ہیں پیٹھ پیچھے اس پر تنقید یا اسکی ایسے خصلتوں پر مزاق اڑاتے ہیں۔
انسان کو صرف اچھے اور مثبت پیش کرکے جینا اور آگئے بڑھنا ہوتا ہے ۔
پیچھے یہ نہیں دیکھنا ہے میرے تعریف اور تنقید کرنے والے لوگ کون کون ہیں۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

error: Content is protected !!