بی ایس او شہداء کے فکر و فلسلفے کو آگے لیکر بڑھ رہی یے:چیئرمین بی ایس او

Spread the love

کوئٹہ : بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مرکزی چیئرمین نزیر بلوچ نے شہید سلام ایڈووکیٹ اور شہید آسمہ سلام کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے بلوچستان میں سیاسی کارکنوں کے ٹارگٹ کلنگ مسخ شدہ لاشوں و لاپتہ کرنے کے سیاسی عمل کو کمزور کرنے کی کوشش کی گئی جو سلسلہ مختلف طریقوں سے مظالم کے زریعے آج بھی تسلسل کے ساتھ جاری یے شہداء کے کمی کو بلوچ سیاسی عمل میں پورا نہیں کیا جاسکتا لیکن انکا فکر قومی تحریک میں بنیاد کی حیثیت رکھتی بی ایس او شہداء کے فکر و فلسلفے کو آگے لیکر بڑھ رہی یے انہوں نے مزید کہا ہے بلوچستان کی موجودہ حکومت جنکے وزارء کا کام آفسران کے جی حضوری وکرپشن کے علاوہ کچھ نہیں موجودہ حکومت کی کوئی سیاسی اپروچ و مستقبل نہیں صرف بندر بانٹ اور سیاسی کارکنوں کو اختیارات و فیصلوں سے دور رکھنے کے لئے انکو بٹھایا گیا یے جوکہ مسنگ پرسن کے اہم مسئلے کو غیر اہم ایشو قرار دے کر رائے عامہ کو گمراہ کرنے کی کوشش کی گئی اس وقت ہزاروں بلوچ نوجوانوں کے لواحقین قرب و تکلیف میں مبتلاء ہے جسکی وجہ سےبلوچستان میں احساس محرومی میں اضافہ اور لوگ عدم تحفظ کا شکار اور خوف کے عالم میں ہے لیکن صوبائی حکومت لواحقین و بلوچستان کے عوام کے زخموں پر نمک پاشی کررہی ہے ایسے منفی پروپگنڈوں کا مقصد سیاسی تحریک کو دبانا و کمزور کرنا ہے لیکن بلوچ سیاسی کارکن شعور و شہداء کے فکر و فلسفے پر عمل کرکے ایسے منفی پروپگنڈوں کو ناکام بنائنگے ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

error: Content is protected !!