کارکن پرامن و دلیل کے زریعے بی ایس او کے مخالفین کے منفی پروپگنڈے کا جواب دے:ترجمان بی ایس او

Spread the love

کوئٹہ: بلوچ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن کے مرکزی ترجمان نے کہا ہے کارکن پرامن و دلیل کے زریعے بی ایس او کے مخالفین کے منفی پروپگنڈے کا جواب دے تنظیم کے نام پر کسی کو تقسیم در تقسیم کی اجازت نہیں دی جاسکتی بی ایس او نے کبھی دھڑے بندی و تقسیم کے ایک تلخ حقیقت سے انکار نہیں کیا یے نہ ہی ہم نے کسی کو بلوچ طلباء کے سرگرمیوں کی حوالے سے حوصلہ شکنی کی ہے بلکہ ہمیشہ اتحاد و یکجہتی و اتفاق کے نظریے پر کاربند رہے ہے بی ایس او بلوچ طلباء کے تمام سرگرمیوں و جدوجہد کو حوصلہ افزاء سمجھتی ہے اداروں کی سطح پر کونسلز و تمام بلوچ طلباء تنظیموں کے درمیاں مثبت ربط و تعاون کے خوہاں یے لیکن بی ایس او کے دھڑے بننے و تقسیم کی عمل ہمیشہ کونسل سیشن کے دوران یا مرکزی کمیٹی کے اجلاسوں کے دوران ہوئی ہے جسکے تحت اب بھی مختلف دھڑے مختلف لائحقوں کے ساتھ سیاست کررہے ہے اختلاف رائے کے باوجود بی ایس او نے کسی تنظیم کے سرگرمیوں کی مخالفت نہیں کی یے بلکہ ہمیشہ اتحاد و یکجہتی کا دعوت دیا یے لیکن گذشتہ دو سال سے ایسے لوگ بی ایس او کا نام استعمال کررہے یے جنکا عملی طور پر بی ایس او کے کسی دھڑے سے تعلق نہیں رہی ہے صرف ایک فرد جسکو ڈسپلن کے خلاف ورزی پر بی ایس او پجار سے نکالا گیا تھا انکے سربراہی میں بی ایس او کا نام استعمال کررہے ہے جوکہ سیاسی اخلاقیات و بلوچ سیاست کے روایات کے خلاف ہے اس طریقے سے کسی کو بی ایس او کا نام و جھنڈا استعمال کرنے کی ہر سطح پر دلیل کے ساتھ مخالفت کرینگے اخبارات و سوشل میڈیا کے زمہ دار لوگ کسی ایسے منفی چیزوں کو تقویت نہ دے جس سے طلباء کے درمیان انتشار پیدا ہو بی ایس او کے تمام کارکنوں کو تاکید کی گئی یے کہ انتشار کے بجائے دلائل کے بنیاد پر تنظیمی سرگرمیوں کو آگے بڑھائے منفی سیاسی کلچر کی کسی صورت اجازت نہیں دی جاسکتی ۔

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

error: Content is protected !!