بنیادی صفحہ / اردو / مثبت سوچ

مثبت سوچ

تحریر عبدالمالک گدور

 

میں نے جب اپنے 20 سالہ تجربے کے مطابق لفظ سوچ کی لغوی اور اصطلاحی معنیٰ پر نظر دوڑائی تو اس میں مجھے بہت کچھ سیکھنے اور سمجھنے کو ملا ۔دوسری جانب دیکھا کہ انسانی زندگی میں اس(سوچ) کا بڑا اثر پڑتا ہے اور جب ہم دین اسلام کی تعلیمات کا جائزہ لیں تو اسلام نے بھی ہمیں یہ ہی تاکید کی ہے اور اسلام نے مثبت سوچ اور پختہ نیت پر ہمیں حیاتِ زندگی گزارنے کا بڑا عظیم درس دیاہے ۔افسوس سے کہنا پڑتا ہے آج ہمارے اس معاشرے میں مثبت سوچ والے لوگوں کی کمی ہے اور معاشرے کی اصل میں بگاڑ انہی منفی سوچ والے لوگوں سے ہوتی ہے لیکن مزید افسوس ہوتا ہیکہ ہمارے پڑھے لکھے معاشرے میں اس وباءکا پھیلائوں کچھ زیادہ ہی پایا جاتاہے حالانکہ تعلیم یافتہ لوگوں کو اس وباء سے بچنے کا مکمل شعور ہوتا ہے لیکن ان میں شعور ہونے کے باوجود بھی وہ برے کاموں اور بری سوچوں میں مبتلا ہیں۔ میرا یہ اُن تعلیم یافتہ لوگوں کیلئے ایک چھوٹا سا اور عاجزانہ پیغام ہے کہ اپنے منفی سوچوں سے گریز کریں اور اپنی تعلیم و زندگی کو بامقصد گزارنے کی کوشش کریں۔

آج اگر جتنے بھی لوگ باعزت اور بامقصد زندگی گزار رہے ہیں وہ یہ ہی لوگ ہیں جو اپنی مثبت سوچ کی بدولت سے ہی سب کچھ ہیں ۔
انسان کی زندگی کو تباہی، برے اور غلط راستوں پر لے جانے والا ذریعہ یہ ہی اس کی منفی سوچ ہے اور اسی طرح دوسری جانب انسان کی اصل کامیابی کا راز بھی ہوتا ہے وہ اس کی مثبت سوچ ہوتی ہے ۔

اولیاءکرام و بزرگان دین کی تعلیمات نے بھی ہمیں واضع طور پر درس دیا ہے کہ انسانی زندگی کا اصل مقصداور منصب ہی اس کی مثبت سوچ و کردار سے جانا جاتا ہے ۔ اولیاءکرام نے فرمایا کہ غلط اور بری سوچ رکھ کر مسجد میں عبادت کیلئے داخل ہونا الٹا گناہ میں شریک ہوتا ہے چونکہ اللہ رب العزت کو ہماری اس عبادت اور ریاضت کی کوئی ضرورت و پرواہ نہیں کیونکہ ہم جو کچھ بھی عبادت کرتے ہیں صرف و صرف اپنے لئے ثواب اور نیکیاں کمانے کے لیئے کرتے ہیں ۔میں اس بات پر پریشان اور حیران ہوں کہ انسان بذات خود وہ اپنے آپ کو گناہ، غلط کاموں اور ناکامی کی طرف لے جاتا ہے تو اس بات سے ہم یہ اندازہ لگاسکتے ہیں کہ انسان اپنا سب سے بڑا دشمن خود ہے جو ایسی منفی سوچیں لے کر چلتا ہے اور ہاں وہ دلی طور پر غفلت کی نیند سورہا ہوتا ہے کہ میں کامیاب ہوں۔ وہ یہ ہی دل میں خیال کرتا ہیکہ وہ لوگوں کے سامنے باعزت ہے حالانکہ اسطرح حقیقت میں کچھ بھی خاص نہیں۔

ایسے جتنے بھے لوگ ہیں۔وہ سب سے بڑے بےوقوف اور اپنے دشمن خود ہیں ۔
آخر میں اپنے اس موضوع کا اختتام اس ایک قول سے کرنا چاہوں گا کہ

“انسان کی سوچ پہ وہ انعام ملتا ہے جو اس کے اعمال پہ بھی نہیں ملتا ہے”

تعارف: nishist_admin

جواب لکھیں

آپ کا ای میل شائع نہیں کیا جائے گا۔نشانذدہ خانہ ضروری ہے *

*

x

Check Also

ایک شعوری سوال

تحریر : عامر نذیر بلوچ   کائنات میں ہمیشہ سے روایات چلتا ...

مختلف سوچ اقوام کی مضبوطی کا سبب ہے

تحریر: نعیم قذافی   انسان جسم و قد، رنگ یا دیگر اعتبار ...

چلو آو بیٹا افطاری کرتے ہیں

افسانہ نگار: شاد بلوچ امی، امی، امی… نوید کی چیخیں نکل رہے ...

اردو اور کھیترانی

  تحریر ۔ جان گل کھیتران بلوچ اردو ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کھیترانی کیا حال ...

سیو اسٹوڈنٹس فیوچر کے نو منتخب وائس چیئرمین کی حلف برداری

سیو اسٹوڈنٹس فیوچر (ایس ایس ایف) کے نو منتخب وائس چیئرمین کی ...

error: Content is protected !!