ماہانہ محفوظ شدہ تحاریر : مئی 2018

21 وی صدی کا تجربہ

ستار سیلانی  دنیابھر میں سائنس دان اپنے سائنس روم میں ہر وقت کسی نہ کسی تجربے میں رہتے ہیں اور کبی کامیاب کبھی نا کا م ہوتے ہیں ۔ اگر کامیاب ہوا تو پوری انسانیت اس کے تجربے سے فائدہ اٹھاتے ہیں بلا تمیز رنگ ، نسل ، زبان ، مذہب یا خطہ!! جبکہ ملک میں سیاستدان گزشتہ 70 سالوں ...

مزید پڑھیں »

ادب  انت ئسے ۔۔؟

folk.adab

نوشت۔ جمیل فاکر   لوز ادب عربی زبان نا لوز ئسے داڑ کن جتا وختا تیٹی جتا مطلب و معنی بیان کننگانے عربی زبان ٹی داڑ کن ضیافت نا مطلب بیان مسونے ہرا نا معنی مہمانداری نا ئِ ۔ہندن داڑ کہ شاہستگی نا ہم مطلب پاننگا۔باز چاہنداراک انسان نا خیالات و جوزہ ،احساس آتا زبان و لوزانا ذریعہ ٹی دررشانی ...

مزید پڑھیں »

موسمی الیکشن

تحریر : شیخ سراج موسمی پرندے تو سب  نے ہی سنا اور دیکھا ہوگا لیکن جس معاشرے میں ہم رہ رہے ہیں یہاں ہر کام موسمی فطرت پہ میسر ہے کیوں کہ مطلبی ہے لوگ یہاں پہ مطلبی ہے زمانہ یوں تو سیاست اور سیاسی دوکانداری ہر جگہ اور ہر وقت چمکتی رہتی ہے ہر پارٹی کوئی نہ کوئی مسلہ لیے ...

مزید پڑھیں »

مسز سمیرا شوکت حسین عنقاء دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئی

sumera anaqa

بلوچ سرخیل رہنماء نامور شاعر میر محمد حسین عنقاء کی پوتی نیشنل پارٹی مچھ بولان کچھی کی سینئر خواتین رہنماء وڈپٹی جنرل سیکرٹری مسز سمیرا شوکت حسین عنقاء دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئی مرحومہ مرحوم میر شوکت حسین عنقاء کی بیٹی میر نصرت عنقاء کی بھتیجی بی ایس او کے سابقہ صوبائی رہنماء میر چنگیز عنقاء شہزاد حسین ...

مزید پڑھیں »

دا تغ ئس الو !!

افسانہ : حفیظ ساحل  نن نیمہ ء گوریچ نا توار خف تیٹی پننِگ ئس گوریچ نا تُرندی بجلی نا تار تا یانگ یینگ آ مجبور کریسس,  بے پروہ غا گوریج ستمبر نا درخت آتا پنّاتے پلویڑ کریسہ درخت آ تیان مر دننگ ئس. درخت آتا غاژ غیژ نا توار خفتے بسفے کہ….. کمرہ نا دروزہ نا مونا خلوکا ہردہ تینا ...

مزید پڑھیں »

بلوچ قومی یکجہتی وقت کی اہم ضرورت

تحریر: اسرار بلوچ ایک نسل ایک سرزمین ایک ثقافت ایک مذہب ایک سماج کے اندر متحد ہونے کا دوسرا نام قومی یکجہتی ہیں ۔ اقوام کے مضبوط و مستحکم کیلئے بے حد ضروری ہیں ۔ کہ وہ اپنے آنے والے کل کیلئے نسل کیلئے آج کے سخت ترین حالات میں متحد ہو کے مقابلہ کر سکے ۔ ستر کے دھائی ...

مزید پڑھیں »

ادب نا بابت بحث ئس !

نوشت :- ستار سیلانی ای خواہ وہ کہ نوشت و خوان تون تعلق تخوکا ایلمک دا بحث اٹ ساڑی مریر تاکہ براہوئی ادب نا دروشم مون مستی برے. اینو خیر اٹ براہوئی ادب و بولی نا پن اٹ ” براہوئی اکیڈمی” بلوچی اکیڈمی ” ا. بیدس کئی علاقائی تنظیم و دیوان اک براہوئی ادب کن تینا تینا سوچ نظریہ و ...

مزید پڑھیں »
error: Content is protected !!